Sitaron se agy jahan aor bhi hein (ستاروں سے آگے جہاں اور بھی ہیں)

ستاروں سے آگے جہاں اور بھی ہیں




ستاروں سے آگے جہاں اور بھی ہیں
ابھی عشق کے امتحاں اور بھی ہیں

تہی زندگی سے نہیں یہ فضائیں
یہاں سیکڑوں کارواں اور بھی ہیں

قناعت نہ کر عالم رنگ و بو پر
چمن اور بھی آشیاں اور بھی ہیں

اگر کھو گیا اک نشیمن تو کیا غم
مقامات آہ و فغاں اور بھی ہیں

تو شاہیں ہے پرواز ہے کام تیرا
ترے سامنے آسماں اور بھی ہیں

اسی روز و شب میں الجھ کر نہ رہ جا
کہ تیرے زمان و مکاں اور بھی ہیں

گئے دن کہ تنہا تھا میں انجمن میں
یہاں اب مرے رازداں اور بھی ہیں




Poet: Allama Muhammad Iqbal

Follow More Poetry

Allama Muhammad Iqbal was a poet, Scholar and politician from Punjab, British India, Iqbal poetry in Urdu and Persian is considered to be among the greatest of the modern era.

Allama IQbal Best Poetry

Sitaron se agy Jahan aor bhi hein
Abhi ishaq ke imtehan or bhi hein




Sitaron se agy jahan aor bhi hein (ستاروں سے آگے جہاں اور بھی ہیں)

Facebooktwitterredditpinterestlinkedintumblrmail

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *